کابلی چنے کی ترقی دادہ اقسام سال 18-2017


(1) نور 2013

  • نور 2013 کابلی چنے کی زیادہ پیداواری صلاحیت کی حامل نئی قسم ہے۔
  • یہ قسم موٹے دانوں ، بہترین شکل و صورت اور پرکشش رنگ کی حامل ہے۔
  • اس کا دانہ درآمدی چنےکی طرح موٹا اور ذائقہ مقامی اقسام جیسا ہے۔
  • اس کے ہزار دانوں کا وزن 320 گرام سے زیادہ ہے۔
  • اس کی پیداوار صلاحیت 30 من فی ایکڑ تک ہے۔
  • یہ قسم چنے کے مرجھاو بہتر قوت مدافعت رکھتی ہے۔
  • یہ قسم پنجاب کے نہری اور زیادہ بارش والے بارانی اضلاع میں کاشت کے لئے موزوں ہے۔

(2) ٹمن 2013

  • یہ قسم 2013 میں کاشت کے لئے منظورکی گئی ہے۔
  • ٹمن کابلی چنے کی زیادہ پیداواری صلاحیت کی نئی قسم ہے۔
  • اور اپنے سائزکی وجہ سے درآمد شدہ چنوں کا بہترین متبادل ہے۔
  • اس کے دانے درمیانے سائز کے ہیں۔
  • اس کی پیداواری صلاحیت 27 من فی ایکڑ ہے اور خشک سالی کے خلاف قوت مدافعت رکھتی ہے۔
  • یہ قسم بارانی علاقوں اور پوٹھوہار میں تمام مروجہ اقسام سے زیادہ پیداوار دیتی ہے۔

(3) نور 2009

  • یہ کابلی چنے کی ایک قسم ہے۔
  • یہ بہترین پیداواری صلاحیت کی حامل ہے۔
  • بیماریوں کے خلاف درمیانی قوتِ مدافعت رکھتی ہے۔
  • پنجاب کے نہری اور زیادہ بارش والے بارانی علاقوں میں کاشت کے لئے موزوں ہے۔

(4) سی ایم 2008

  • قابلی چنے کی یہ قسم نیاب فیصل آباد میں تیار کی گئی ہے۔
  • یہ قسم کم پانی ، بارانی علاقوں اور پوٹھو۔
  • ہارمیں بھی تمام مروجہ اقسام سے زیادہ پیداوار دیتی ہے۔
  • یہ قسم مرجھاو کے خلاف بہتر اور جھلساو کے خلاف درمیانی قوت مدافعت رکھتی ہے۔

(5) نور 91

  • کابلی چنے کی قسم نور 91 زیادہ پیداواری صلاحیت رکھتی ہے۔
  • اس کے پودے سیدھے اور لمبے ہوتے ہیں۔
  • اس کا تنا مضبوط ،ٹاڈ اور دانے موٹے ہوتے ہیں۔
  • یہ قسم نہری اور زیادہ بارش والے بارانی علاقوں کے لئے زیادہ موزوں ہے۔
  • یہ قسم بھی پیلے پن کے خلاف درمیانی قوت مدافعت رکھتی ہے۔