مکئی کی پیداوار بڑھانے کے اہم عوامل سال 18-2017


مکئی کی پیداوار بڑھانے کے اہم عوامل

زمین کی بہتر تیاری کے لئے چار مرتبہ ہل اور سہاگہ چلائیں۔ پہلی مرتبہ مٹی پلٹنے والا ہل ضرور چلائیں اور اگر زمین میں سخت تہہ موجود ہو تو اسے گہرا ہل چلا کر توڑلیں۔ نیززمین کی ہمواری کا خاص خیال رکھیں۔ اس مقصد کے لئے لیزر لیولر کا استعمال کیا جائے۔ بیماریوں سے پاک زہرآلود بیج استعمال کریں۔ محکمہ زراعت کی منظور شدہ ترقی دادہ اقسام ملکہ۔ 16، اگیتی۔ 2002، ایم ایم آر آئی ییلواور پرل ،ایف ایچ 1046، وائی ایچ 1898-اور ایف ایچ 949 کاشت کریں۔اس کے علاوہ مارکیٹ میں دستیاب ملٹی نیشنل اور مقامی کمپنیوں کے تیار کردہ ہا ئبرڈز بھی کاشت کیے جا سکتے ہیں۔لیکن یاد رہے ان سے پکی رسید لینا اور بوائی کے بعد بیج والے خالی تھیلوں کو سنبھال کے رکھنا چاہیے تاکہ کسی شکایت کی صورت میں کام آ سکیں۔ مکئی کی کاشت قطاروں میں سوادو سے اڑھائی فٹ کے فاصلے پر کریں۔ شرح بیج ڈرل کاشت کے لئے 12 سے 15 کلوگرام اور وٹوں پر بذریعہ چو پا کاشت کے لئے 8 سے 10 کلوگرام فی ایکڑ رکھیں۔ موسمی مکئی کی دوغلی اقسام کے لئے پودوں کی تعداد 29 سے 30 ہزارفی ایکڑ رکھیں جبکہ سنتھیٹک اقسام کے لئے پودوں کی تعداد 25 ے 26 ہزار فی ایکڑ رکھیں۔ بہاریہ مکئی کی دوغلی اقسام کے لئے پودوں کی تعداد 35 سے 36 ہزار فی ایکڑ رکھیں۔ بارانی علاقوں میں دوغلی اقسام کے پودوں کی تعداد 27 ہزار فی ایکڑ جبکہ سنتھیٹک اقسام کے پودوں کی تعداد 23 ہزار فی ایکڑ رکھیں۔ پھول آنے سے دانے بننے تک مکئی کو پانی کی کمی نہ آنے دیں۔ کھادوں کا متناسب اور متوازن استعمال زمین کے لیبارٹری تجزیہ کے مطابق کریں۔ کونپل کی مکھی اورمکئی کے گڑووں کے حملہ کی صورت میں بروقت مناسب زہراور صحیح طریقے سے اِنسدادی اقدام کریں۔ جڑی بوٹیوں کی تلفی کے لئے مناسب زہر استعمال کریں۔