گندم کی امدادی قیمت بڑھنے کے فائدے سے پنجاب کے کاشتکار محروم


اسلام آباد وفاقی حکومت نے گندم کی امدادی قیمت 5 سال کے بعد 50 روپے فی من بڑھائی ہے مگر یوں لگتا ہے کہ پنجاب کے کاشتکار امدادی قیمت میں اضافے سے مستفید نہیں ہوسکیں گے، اس کی وجہ گندم کی بلند پیداواری لاگت اور عوامی احتجاج کے خوف سے حکومت کی آٹے کی قیمتوں میں مزید اضافہ روکنے کے لیے کی جانے والی کوششیں ہیں۔

گندم کی امدادی قیمت کا تعین کابینہ اقتصادی رابطہ کمیٹی ( ای سی سی ) کرتی ہے۔ رواں سال گندم کی امدادی قیمت 50 روپے اضافے سے 1350 روپے فی من مقرر کی گئی ہے۔ دوسری جانب پنجاب میں فی من گندم کی پیداواری لاگت کا تخمینہ 1349.57 روپے لگایا گیا ہے جو امدادی قیمت کے مساوی ہے۔