نئی کپاس کے نرخ عالمی منڈی کے مطابق طے کرنے پر غور


وزیر اعظم ہاؤس میں آج اجلاس، لیٹر کی کاپی تمام سٹیک ہولڈرز کو بھجوا دی گئی حکومت سپورٹ پرائس مقرر کرکے ڈیوٹی فری درآمد پر پابندی لگائے ،کسان اتحاد

حکومت نے کپاس کی نئی فصل کے نرخ عالمی منڈی میں موجودہ قیمت کے مطابق طے کرنے پر غور شروع کر دیا، اس سلسلے میں وفاقی وزیر برائے نیشنل فوڈ سکیورٹی اینڈ ریسرچ کی صدارت میں وزیر اعظم ہاؤس میں آج دوپہر اجلاس ہوگا، جس میں پی ٹی آئی کے سینئر رہنما جہانگیر ترین بھی موجود ہونگے ، کاٹن کمشنر ڈاکٹر خالد کی جانب سے مشاورتی اجلاس سے متعلق لیٹر کی کاپی تمام سٹیک ہولڈرز کو بھجوا دی گئی۔ دوسری جانب کاشتکار تنظیموں نے عالمی منڈی میں قیمتوں کے مطابق نرخوں پر تحفظات کا اظہار کیا ہے ۔ پاکستان کسان اتحاد کے مرکزی صدر خالد کھوکھر نے ‘‘دنیا’’ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد نے کامرس منسٹری سے کپاس کی ڈیوٹی فری درآمد میں ایک ماہ کی توسیع کروا دی، کپاس کی واحد خریدار اپٹما ہے جن کی اجارہ داری کی وجہ سے کپاس کے کاشتکار کا استحصال ہو رہا ہے ، عالمی منڈی کے مطابق قیمت طے کرنے سے کاشتکاروں کوسالانہ اربوں کا نقصان پہنچایا جاتا ہے ، حکومت فوری طور پر سپورٹ پرائس مقرر کرے جبکہ ڈیوٹی فری امپورٹ پر پابندی عائد کر کے بجلی ، کھاد ، ڈیزل اور زرعی ادویات کے نرخ کم کئے جائیں۔