بجلی کی پیداوار, گرمیوں میں فرنس آئل درآمد کرنے کی اجازت


حکومت نے موسم گرما اور رمضان المبارک میں بجلی کی طلب میں اضافے کے پیش نظر عارضی طور پر فرنس آئل در آمد کرنے کی اجازت دے دی ہے ۔تفصیلات کے مطابق موسم گرما اور رمضان المبارک کے با برکت مہینہ میں بجلی کی طلب میں اضافے کے پیش نظر یہ اجازت اقتصادی رابطہ کمیٹی کی جانب سے دی گئی جس کے بعد پاکستان اسٹیٹ آئل (پی ایس او)نے 3 لاکھ 60 ہزار ٹن فرنس آئل کی در آمد کیلئے ٹینڈرز جاری کردیے ہیں۔بتایا جاتا ہے کہ پی ایس او کو آذر بائیجان سے مؤخر ادائیگیوں پر فرنس آئل کی خریداری کی سہولت فراہم کی گئی تھی ،تاہم پی ایس او حکام نے موخر ادائیگیوں پر فرنس آئل کی خریداری کے بجائے ٹینڈرز جاری کردیے ہیں۔پی ایس اوکی جانب سے 60ہزار ٹن کے 6کارگو کی در آمد کیلئے ٹینڈرز جاری کیے گئے ہیں جس کے تحت 3 لاکھ60ہزار ٹن فرنس آئل در آمد کیا جائیگا ۔موسم گرما میں مئی اور جون کے دوران بجلی کی طلب میں اضافہ دیکھا جاتا ہے جبکہ اس رواں سیزن محکمہ موسمیات نے کراچی میں شدید گرمی (ہیٹ ویو) کی پیش گوئی بھی کررکھی ہے ۔ اس وقت ملک کی دوسری سب سے بڑی آئل ریفائنری بھی سالانہ مرمت کے باعث 8مارچ سے بند ہے جو کہ ممکنہ طور پر 29اپریل کے بعد پیداواری عمل بحال کریگی ۔آئل انڈسٹری ذرائع کا کہنا ہے کہ فرنس آئل کی در آمد کی عارضی اجازت دینے کے باوجود حکومت کی بجلی کی پیداوار کیلئے ایل این جی پر انحصار کی پالیسی برقرار ہے اور فرنس آئل کی عارضی در آمد کی اجازت موسم گرما اور رمضان المبارک کے باعث دی گئی ہے۔