پنجاب میں بارشوں سے 35000ایکڑ رقبہ پر گندم اور مکئی کی فصلیں متاثر


پنجاب بھر میں بارشوں سے 35000ایکڑ رقبہ پر گندم اور مکئی کی فصلات متاثر ہو گئیں ،محکمہ زراعت نے بارش کے خطرے کی صورت میں گندم کی کٹائی روکنے کی ہدایت کر دی ۔زرعی ماہرین نے قومی خبر رساں ایجنسی سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ حالیہ بارشیں گندم کی کھڑی فصلوں کے لیے انتہائی مضر ہیں اور پکنے کے مرحلہ میں داخل فصل کے لیے بارش زہر قاتل ہے۔

زرعی ماہرین نے کہاکہ جنوبی پنجاب سمیت جن علاقوں میں گندم کی فصل پک کر تیار ہو گئی تھی وہاں زیادہ نقصان کا اندیشہ ہے تاھم پوٹھوہار میں گندم کی فصل تاحال مکمل تیار نہیں ہو ئی تھی البتہ اس کے باوجود کھیت میں پانی کھڑا ہونے کی صورت میں فصل کو نقصان پہنچ سکتا ہے ۔محکمہ زراعت پنجاب کے ترجمان نے اے پی پی کو بتایاکہ بے موسمی بارشوں کے باعث غیر حتمی ابتدائی اندازہ کے مطابق صوبہ پنجاب میں 35 ہزار ایکڑ رقبہ پر مشتمل گندم، مکئی اور چارہ کی فصلات متاثر ہوئی ہیں لہٰذا کاشتکار اپنی فصلات کی دیکھ بھال کے لئے ریڈیو اور ٹیلی ویژن سے نشر ہونے والے موسمی پیغامات کو توجہ سے سنیں اور اگر بارش کا خطرہ ہو تو گندم کی کٹائی روک دیں اور کٹی ہوئی گندم کو ترپال یا شیٹ لے کر ڈھانپ دیں۔

بارش رکنے کے بعد گیلی گندم کو چبوترے پر ڈال کر دھوپ لگوائیں۔ترجمان نے بتایاکہ امسال بارشیں معمول سے زیادہ ہوئی ہیں نیز درجہ حرارت بھی کم رہا ہے اس لئے کاشتکار گندم کی کٹائی فصل کے پوری طرح پکنے پر شروع کریں۔ کاشتکار گندم کی کٹائی کے بعد بھریاں قدرے چھوٹی باندھیں اور سٹّوں کا رُخ اوپر کی طرف رکھیں۔ کھلواڑے چھوٹے رکھیں اور اونچے کھیتوں میں کھلیان لگائیں جبکہ پانی کی نکاسی کے لئے اردگرد کھالی بنائیں۔

ترجمان نے مزید بتایا کہ گندم کی کٹائی کیلئے سب سے بہترین مشین کمبائن ہارویسٹر ہے جس کے استعمال سے کافی حد تک پیداوار کے ہونے والے نقصان کو کم کیا جا سکتا ہے۔ ترجمان نے مزید بتایا کہ مکئی کے کاشتکاراپنے کھیتوں سے بارش کا پانی ساتھ موجود خالی کھیت میں منتقل کریں تاکہ زیادہ پانی کھڑا ہونے کے باعث مکئی کے پودے مرنے سے محفوظ رہیں نیز مرطوب موسم میں مکئی کے پودوں پر کیڑے مکوڑوں اور بیماریوں کا خطرہ بھی موجود ہوتا ہے اس لئے کاشتکار محکمہ زراعت کے مقامی عملے کے مشورہ سے انتظامات کریں۔ چارہ کی فصلات سے بھی پانی خالی کھیتوں میں یا فصل کے اردگرد کھائی کھود کر زائد پانی کو کھائی میں منتقل کر دیں۔