پولیسٹرفلامنٹ یارن کی نئی ویلیوایشن رولنگ مسترد کرتے ہیں، پائما


کراچی پاکستان یارن مرچنٹس ایسوسی ایشن( پائما) نے ٹیکسٹائل انڈسٹری کے بنیادی خام مال پولیسٹر فلامنٹ یارن کی نئی ویلیو ایشن رولنگ پر شدید تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے اسے مسترد کردیا ہے اور 15 مارچ 2019کو جاری کی گئی ویلیو ایشن رولنگ 1355/ 2019 کوکسٹم ایکٹ 1969 کی شق 25ڈی کے تحت چیلنج کیا ہے۔

پائما نے محکمہ کسٹمز سے موجودہ متنازع ویلیو ایشن رولنگ واپس لینے اور اسٹیک ہولڈرز سے مشاورت کے بعد نئی رولنگ جاری کرنے کامطالبہ کیا ہے۔ پائما کی جانب سے ڈائریکٹر جنرل کے پاس دائر کی گئی ویلیو ایشن کا ازسرنو جائزہ لینے کی درخواست میں اسٹیک ہولڈرز کی مشاورت کے بغیر رولنگ کے اجرا پر احتجاج کرتے ہوئے اسے بے بنیاد اور ناقابل قبول قرار دیا ہے۔ درخواست میں بتایاگیا کہ پچھلے 10سال سے ایک نظام کے تحت محکمہ کسٹمز کا ویلیوایشن ڈپارٹمنٹ اسٹیک ہولڈرز کی مشاورت کے بعد فارمولے کو مدنظر رکھتے ہوئے پچھلے 90دنوں کے ڈیٹا کی بنیاد پر اگلے90دنوں کے لیے ویلیو ایشن رولنگ جاری کرتا ہے۔ اس ضمن میں پائما نے گذشتہ 90دنوں کا ڈیٹا بھی جمع کروایا تھا لیکن اس کے باوجود درآمدی پولیسٹر فلامنٹ یارن کی زائدپرائس پر رولنگ جاری کردی گئی جبکہ حقیقی پرائس بہت کم ہیں جس کی تصدیق پولیسٹر خام مال کی بین الاقوامی ویب سائٹ سے کی جاسکتی ہے۔

پائما نے اپنی نظرثانی درخواست میں ڈائریکٹر جنرل سے پولیسٹر فلامنٹ یارن کی نئی ویلیوایشن رولنگ واپس لینے اور پرائس کے ازسر نوجائزے کے لیے ایسوسی ایشن سے مشاورت کی درخواست کی ہے تاکہ حقیقی ویلیوایشن رولنگ جاری کی جاسکے اور ٹیکسٹائل انڈسٹری کے بنیادی خام مال کی مناسب داموں درآمد یقینی بنائی جاسکے جس سے نہ صرف ٹیکسٹائل انڈسٹری کو مناسب قیمت پر خام مال ملے گا بلکہ حکومت کے ریونیو میں اضافہ ہوگا اوردرآمدکنندگان کو بھی برابری کی سطح پر کاروباری مواقع مسیر آئیں