روئی کی قیمتوں میں اضافہ, 8700 روپے من ہو گئیں


دو 2 روزمیں 400روپے فی من کاریکارڈ اضافہ،کاشتکاروں میں خوشی کی لہر، چند روز میں مزید تیزی کا امکان :کاٹن جنرز

روپے کے مقابلے میں ڈالر کی قدر میں غیر معمولی اضافے کے باعث روئی اور پھٹی کی قیمتوں میں زبردست تیزی کا رجحان ہے اورروئی کی قیمتیں گزشتہ دو روز کے دوران ریکارڈ 400 روپے فی من اضافے کے بعد گزشتہ دو ماہ کی بلند ترین سطح 8 ہزار 700 روپے فی من تک پہنچ گئیں،جس سے کاشتکاروں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی ۔چیئرمین کاٹن جنرز احسان الحق نے بتایاکہ پاکستان سے کاٹن پراڈکٹس کی برآمدات میں اضافے ، پنجاب کی ٹیکسٹائل ملز کو گیس کی بحالی اور گیس ٹیرف میں 45فیصد کمی کے باعث 100سے زائد ٹیکسٹائل ملز دوبارہ فعال ہونے کی اطلاعات کی وجہ سے پاکستان بھر میں ایک ہفتے کے دوران روئی کی قیمتوں میں700روپے فی من کا اضافہ سامنے آ چکا ہے اور توقع ظاہر کی جا رہی ہے کہ آئندہ چند روز کے دوران ان میں مزید تیزی کا رجحان سامنے آئے گا۔ چین اور ترکی کی جانب سے امریکاسے روئی کی درآمدات معطل ہونے سے دنیا بھر میں روئی کی قیمتوں میں مندی کا رجحان دیکھا جا رہا ہے لیکن اس کے باوجود گزشتہ ایک ہفتے سے پاکستان میں روئی کی قیمتوں میں تیزی کا رجحان ہے ۔