پاکستان کوزرعی شعبے میں نقصانات پرقابوپاناہوگا، یوایس ایڈ


پاکستان آم کی بہت ورائٹیاں پیدا کرتا ہے، زرعی سیکٹر میں نقصانات پر قابو پانے کے لیے جدید ٹیکنالوجی متعارف کرانا ہو گی یو ایس ایڈ پاکستان کو زرعی سیکٹر میں ہر قسم کی معاونت کے لیے تیار ہے۔

 اس موقع پر چیئرمین پی اے آر سی ڈاکٹر یوسف ظفر نے کہاکہ انڈسٹریل سیکٹر میں ہم اتنے ایفیشنٹ نہیںتاہم زرعی سیکٹر میں ہم اپنی برآمدات کو بڑھا سکتے ہیں، یو ایس ایڈ کی زراعت میں پاکستان کی معاونت پر شکر گزار ہیں، پاکستان کا فوڈ بل بڑھ رہا ہے، ہم نے 6ارب ڈالر کی فوڈ آئٹمز درآمد کی جسمیں دالیں اور کھانے کا تیل شامل ہے، ہمیں زراعت پر توجہ دینے کی ضرورت ہے کیونکہ پاکستان کے زرعی سیکٹر میں بہت پوٹینشل ہے۔

اس موقع پر ایف پی سی سی آئی کے نائب صدر کریم عزیز نے کہاکہ یو ایس ایڈ کو پاکستان کی برآمدات کو فروغ دینے میں معاونت پر شکر گزار ہیں، آم پاکستان کی برآمدات میں انتہائی اہمیت کا حامل ہے، پاکستان کا آم اند رون اور بیرون ملک ہر جگہ پر مشہور ہے، ایگری کلچر مارکیٹ ڈیولپمنٹ پر یوایس پاکستان کی پارٹنر شپ انتہائی اہمیت کی حامل ہے۔