23 کروڑ ڈالر کی گندم برآمد, سونے کا برآمدی بل 24 فیصد بڑھ گیا


پاکستان نے گزشتہ مالی سال مجموعی طور پر 11 لاکھ 89 ہزار ٹن گندم برآمد کرکے 23 کروڑ 63 لاکھ ڈالرز کا قیمتی زرمبادلہ کمالیا ہے ۔ مالی سال 2016-17 میں گندم صرف ایک کروڑ 3 لاکھ ڈالرز کا گندم برآمد کیا گیا تھا، حکومت نے خطیر زرتلافی فراہم کرتے ہوئے گزشتہ مالی سال 14 لاکھ ٹن گندم برآمد کرنے کا ہدف مقرر کیا تھا جس میں3 لاکھ 20 ہزار ٹن کی کمی رہی ہے ۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق صرف مارچ 2018 میں پاکستان نے 2 لاکھ 41 ہزار ٹن گندم برآمد کرکے 4 کروڑ 70 ڈالرز کمائے تھے جبکہ اپریل 2018 میں گندم کی برآمدات 3 لاکھ ٹن رہی تھی جو پاکستان کی تاریخ میں کسی ایک مہینے کی سب سے زیادہ گندم کی ایکسپورٹ تھیں۔ حکومت نے گندم کی نئی فصل کے آنے سے قبل زمین خالی کرنے کی غرض سے دسمبر 2017 میں 20 لاکھ ٹن گندم برآمد کرنے کی اجازت دی تھی جس کی کٹائی 30 جون 2018 تک کی جانی تھی۔ ادھر دوسری جانب پاکستان میں سونے کے درآمدی بل میں 24.28 فیصد اور حجم میں 15.68 فیصد کا اضافہ ہو گیا۔ ادارہ برائے شماریات کے مطابق جولائی 2017 سے جون 2018 تک 2 کروڑ 7 لاکھ 13 ہزار ڈالر کا 509 کلو گرام سونا درآمد کیاگیا جبکہ مالی سال 2016-17 میں 1 کروڑ 66 لاکھ 67 ہزار ڈالر کا 440 کلوگرام سونا درآمد کیا گیا تھا، اس طرح سونے کے درآمدی حجم میں 69 کلو گرام اور مالیت میں 40 لاکھ46 ہزار ڈالر کا اضافہ ہوا۔