لاہور چیمبر کی ٹیکس ایمنسٹی اسکیم سے فائدہ اٹھانے کی تلقین


لاہور چیمبرنے کاروباری برادری پر زور دیا ہے کہ وہ ٹیکس ایمنسٹی اسکیم سے بھرپور فائدہ اٹھائے اور اپنے غیر ظاہر شدہ اثاثہ جات وغیرہ کو پانچ فیصد ٹیکس ادا کرکے قانونی حیثیت دے تاکہ اس اسکیم کے خاتمے کے بعد پیدا ہونے والی پیچیدگیوں سے بچا جاسکے ، لاہور چیمبر کے صدر ملک طاہر جاویدنے کہا کہ جو تاجر کسی وجہ سے اپنے اثاثہ جات ظاہر نہیں کرسکے ان کیلئے بہترین موقع ہے کہ وہ صرف پانچ فیصد ٹیکس ادا کرکے انہیں قانونی حیثیت دے دیں، انہوں نے کہا کہ ٹیکس ایمنسٹی اسکیم 2018 ء کے تحت شناختی کارڈ کو نیشنل ٹیکس نمبر کا درجہ دیا گیا ہے ،12لاکھ روپے سالانہ آمدن والے افراد کو ٹیکس سے استثنیٰ دیا گیا ہے ، غیرملکی زرمبادلہ واپسی پر دو فیصد ٹیکس لاگو کیا گیا ہے ، ملکی و غیر ملکی زرمبادلہ کے حامل افراد حکومت سے پانچ سالہ مدت کیلئے بانڈز خرید سکیں گے جس پر حکومت سالانہ3فیصد منافع بھی دے گی، بیرون ملک چھپائے گئے اثاثہ جات کو 3 فیصد جرمانہ ادا کرکے قانونی کیا جاسکے گا، انہو ں نے کہا کہ اس اسکیم سے فائدہ اٹھانے والوں کو نیب، ایف بی آر اور ایف آئی اے سے مکمل تحفظ ہوگا، لاہور چیمبر کے عہدیداروں نے کہا کہ ظاہر نہ کیے گئے اثاثہ جات کو قانونی شکل دینے کا یہ بہترین موقع ہے لہٰذا کاروباری برادری 30 جون تک اس سے بھرپور فائدہ اٹھائے ۔