اسٹاک ایکسچینج میں 278 پوائنٹس کا اضافہ,43500 کی نفسیاتی بحال


پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں بدھ کو تیزی کا رجحان غالب رہا اور کے ایس ای 100انڈیکس 278پوائنٹس کے اضافے سے ایک بار پھر 43500 کی نفسیاتی حد پر بحال ہو گیا جبکہ سرمائے میں33ارب روپے کا اضافہ بھی ریکارڈ کیا گیا،سرمایہ کاروں اور مالیاتی اداروں کی جانب سے مارکیٹ کو مندی کے رجحان سے نکالنے کی خاطر کی گئی سرمایہ کاری کی بدولت اسٹاک مارکیٹ میں بدھ کو تیزی دیکھی گئی اور کے ایس ای 100 انڈیکس3بالائی حد عبور کر گیا ، تجزیہ کاروں کے مطابق سرمایہ کاروں نے کم قیمت حصص کی خریداری میں دلچسپی لی جس کی وجہ سے مارکیٹ مثبت زون میں داخل ہو گئی اور تیزی کا یہ سلسلہ کاروبار کے اختتام تک دیکھا گیا ، بدھ کو کاروبار کے اختتام پر کے ایس ای100انڈیکس میں278پوائنٹس کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس سے انڈیکس43228پوائنٹس سے بڑھ کر 43507پوائنٹس ہو گیا،اسی طرح165پوائنٹس کے اضافے سے کے ایس ای 30 انڈیکس 21459 پوائنٹس اور کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس139پوائنٹس اضافے سے 31413پوائنٹس سے بڑھ کر 31553 پوائنٹس ہو گیا،مندی کے سبب سرمائے میں 33 ارب 91 کروڑ 89 لاکھ 1 ہزار 519 روپے کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس کے نتیجے میں سرمائے کا مجموعی حجم 89 کھرب 4 ارب 69 کروڑ 80 لاکھ 8 ہزار 405 روپے سے بڑھ کر 89 کھرب 38 ارب 61کروڑ69لاکھ9ہزار924روپے ہو گیا ،بدھ کو 5ارب روپے مالیت کے 11 کروڑ 18 لاکھ97ہزار حصص کے سودے ہوئے جبکہ منگل کو5ارب روپے مالیت کے 13کروڑ77لاکھ 87ہزار حصص کے سودے ہوئے تھے ،مجموعی طور پر332کمپنیوں کا کاروبار ہوا جس میں سے 197کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ ،113میں کمی اور22کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں استحکام رہا ، کاروبار کے لحاظ سے بینک آف پنجاب ایک کروڑ ،میزان بینک 36لاکھ38ہزار ،کے الیکٹرک لمیٹڈ 70لاکھ91ہزار ،ڈی جی کے سیمنٹ 51لاکھ6ہزار اورٹی آر جی پاک لمیٹڈ 50لاکھ74ہزار حصص کے سودوں سے سرفہرست رہے ،قیمتوں میں تیزی کے اعتبار سے یونی لیور فوڈزکے حصص کی قیمت 314.00روپے کے اضافے سے 8099.00روپے ہو گئی۔