کپاس کے کاشتکار کاشت سے قبل بیج کو زہرآلود ضرور کر لیں تاکہ فصل رس چوسنے والے کیڑوں سے محفوظ رہے،ترجمان محکمہ زراعت پنجاب


فیصل آباد : 09 اپریل2018:محکمہ زراعت پنجاب کے ترجمان نے کہا ہے کہ کپاس کے کاشتکار بوائی سے قبل بیج کو زہرآلود ضرور کر لیں تاکہ کپاس کی فصل آئندہ ایک ماہ تک رس چوسنے والے کیڑوں خاص طور پر سفید مکھی کے حملے سے محفوظ رہے۔ترجمان نے مزید بتایا کہ سفید مکھی کپاس کے پتہ مروڑ وائرس کے پھیلاؤ کا موجب بنتی ہے۔کپاس کی فصل کے آغاز پر ہی رس چوسنے والے کیڑوں کے حملے کا خدشہ ہوتا ہے،ان سے بچنے کیلئے کاشتکار ابتدائی سٹیج پر ہی فصل پر سپرے شروع کر دیتے ہیں جس کی وجہ سے نہ صرف کاشتکاروں کی پیداوار ی لاگت بڑھ جاتی ہے بلکہ کپاس کے کسان دوست کیڑوں کی تلفی بھی ہو جاتی ہے۔ترجمان نے یہ بھی بتایا کہ بیج کو زہر آلود کرنے سے کپاس کی فصل 35 سے40 دن کیلئے رس چوسنے والے کیڑوں خاص کر وائرس کے حملے سے بچ جاتی ہے۔لہذٰا کاشتکار بوائی سے قبل بیج کو زہرآلود کریں اوریکم اپریل سے30 اپریل تک کاشتہ کپاس کی فصل کا پودے سے پودے کا فاصلہ 12 تا15 انچ رکھیں جبکہ کھیلیوں سے کھیلیوں تک کا فاصلہ اڑھائی فٹ رکھیں۔مزید معلومات کیلئے کاشتکار محکمہ زراعت (توسیع) کے مقامی عملے سے رابطہ قائم کریں

بشکریہ ایگرو ورڈ