گنے کی فصل کٹائی کیلئے تیار ،کرشنگ کا آغاز تاحال نہ ہوسکا


ڈگری تحصیل میں گنے کی فصل کٹائی کے لیے تیار کھڑی ہے جبکہ شوگر ملز مالکان کی جانب سے ابھی تک گنے کی کرشنگ کا آغاز نہیں کیا گیا،خصوصی گفتگو کرتے ہوئے زمینداروں کے وفدنے بتایا کہ تحصیل ڈگری میں گنے کی فصل کٹائی کیلئے بالکل تیار کھڑی ہے ،زمینداروں کو صرف شوگر ملز کی کرشنگ شروع کرنے کا انتظار ہے ،شوگر ملز نومبر کے مہینے میں کرشنگ کا آغاز کردیتی ہیں لیکن ابھی تک شوگر ملز کھلنے کے کوئی آثار نظر نہیں آرہے ، انہوں نے کہا کہ اکثر ملز مالکان کرشنگ کے سیزن کو چھوٹا کرکے زمینداروں کو بلیک میل اور تنگ کرتے ہیں، حکومت سندھ اس پر ضرور نوٹس لے اور امسال کرشنگ کے سیزن کو لمبے عرصے تک چلانے کو یقینی بنائے ،حکومت سندھ نے گنے کا فی من ریٹ 182 روپے مقرر کیا ہے جو کہ کم ہے کیونکہ زمینداروں کو ایک ایکڑ میں گنے کی پیداوار 600 سے 700 من اوسطً حاصل ہوتی ہے جبکہ ایک ایکڑ پر خرچ تقریباً 50000روپیتک آتا ہے اور 12 ماہ تک کسان اس فصل کی دیکھ بھال کرتا ہے اگر زمیندار کو اسکا مناسب ریٹ نہ ملے تو یہ زمینداروں اور کسانوں کا معاشی استحصال ہوگا اس لیے حکومت گنے کی فی من قیمت 200 روپے سے زائد مقرر کرے تاکہ چھوٹا کاشت کار بھی مناسب منافع کما سکے۔