زرعی تحقیق میں نجی سیکٹر کی ہر ممکن مدد کرینگے ،سکندر بوسن


چاول کی نئی ورائٹی سے فی ایکڑ پیداوار میں اضافہ ہو گا،وفاقی وزیر کا خطاب

وفاقی وزیر برائے نیشنل فوڈ سیکیورٹی اینڈ ریسرچ سکندرحیات بوسن نے کہا ہے کہ چاول کی نئی ورائٹی سے کسانوں کیلئے فی ایکڑ پیداوار میں اضافہ ہو گا اور پاکستان دوسرے ممالک کو زیادہ چاول بر آمد کرنے کے قابل ہو گا، بیج کی اعلٰی قسم فصل کی زیادہ پیداوار کی ضامن ہے ، پاکستان زرعی تحقیق میں پرائیویٹ سیکٹر کی ہر ممکن مدد کرے گا، انکا کہنا تھا کہ چاول ملک کی اہم ترین فصل ہے اور اس سے قیمتی زر مبادلہ بھی حاصل ہوتا ہے اس لیے حکومت چاول کی فصل میں بہتری اور اسکی پیداوار میں اضافے کیلئے ہر ممکن کوشش کر ے گی،انہوں نے گزشتہ روز ان خیالات کا اظہار ’’ ہائبرڈ رائس ٹریننگ کورس ‘‘کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا،تقریب میں چاول کے بیج چائنیز تحقیق دانوں کی جانب سے پیش کیے گئے ، اس سلسلے میں چاروں صوبوں میں ایک سفری سیمینار بھی منعقد کیا گیاجس کا مقصد پاکستان میں زمین کے اعتبار سے چاول کے ہائبرڈ بیج کو جانچنا اور اس سیمینار کے توسط سے چاول کے ہائبرڈ بیج کی ورائٹیز کو بھی پیش کرنا تھا۔