کرشنگ میں تاخیر کسی صورت قبول نہیں ، خرم شیرزمان


چیف جسٹس سندھ ہائیکورٹ صورتحال کا ازخود نوٹس لیں،رکن اسمبلی تحریک انصاف ملز مالکان کو چینی کی زیادہ ریکوری کیلئے جان بوجھ کر حکومت کرشنگ سیزن لیٹ کرتی ہے

پاکستان تحریک انصاف کے رکن سندھ اسمبلی خرم شیرزمان نے کہا ہے کہ سندھ میں گنے کی فصل تیار کھڑی ہے لیکن صوبائی حکومت نے تاحال امدادی قیمت کے حوالے سے کوئی فیصلہ نہیں لیا،کرشنگ میں تاخیر کے باعث گندم کی بوائی شروع نہ ہونے سے کاشت کارشدیدمشکلات سے دوچار ہیں ۔گزشتہ روز اپنے ایک بیان میں خرم شیرزمان نے کہا کہ سندھ کی تاحال گنے کی امدادی قیمت اور ملز کو چلانے کا نوٹیفکیشن جاری نہ کرنا کسان دشمنی اور شوگر ملز مالکان کو مالی فوائد پہنچانے کی پالیسی کا حصہ ہے جو کسی صورت قابل قبول نہیں،کرشنگ سیزن کا غیر ضروری التواء گنے کے کاشتکاروں میں دن بدن بے چینی کا باعث بن رہا ہے ، سندھ حکومت ہرسال جان بوجھ کر کرشنگ سیزن لیٹ کرتی ہے تاکہ وہ کم وزن میں سندھ کے منظور نظر شوگر مالکان کو زیادہ سے زیادہ چینی کی ریکوری دیں سکے ،خرم شیرزمان نے کہا کہ کرشنگ کا عمل دیر سے شروع کیا جانا، پیداوار کا سرکاری طور پر طے شدہ معاوضہ نہ ملنا اور گنے کی فروخت کے بعد بر وقت رقم نہیں ملنے پر چیف جسٹس سندھ ہائیکورٹ سے مطالبہ کرتا ہوں کہ وہ اس سنگین صورتحال کا ازخود نوٹس لیں۔