پانچ5 لاکھ ٹن چینی برآمد کرنیکا فیصلہ, 100 ڈالر فی ٹن سبسڈی ملے گی


شوگر ملز مالکان نے حکومت سے 15 لاکھ ٹن چینی برآمد کرنے کی اجازت مانگی تھی ، امسال 8 کروڑ بوری پیداوار ،ملکی ضرورت 5 کروڑ بوری ہے

پاکستان میں آئندہ ماہ سے 5 لاکھ ٹن چینی کی برآمد شروع ہوگی۔نجی ٹی وی کے مطابق پاکستان میں دو کروڑ بوری چینی ضرورت سے زیادہ ہے ٗیہ چینی برآمد کرنیوالوں کو وزارت تجارت 100 ڈالر فی ٹن سبسڈی دیگی چینی خشکی کے راستے افغانستان، وسطی ایشیائی ریاستوں کو بھجوائی جا سکے گی اوربحری راستے سے خلیجی ریاستوں افریقی ممالک بھی برآمد کی جا سکے گی۔پاکستان کی 80 شو گر ملوں نے امسال8 کروڑبوری چینی پیدا کی جبکہ ملکی ضرورت 5 کروڑ بوری ہے نومبر 2016 میں کرشنگ سیزن کے آغاز پر چینی کی قیمت65 روپے کلو تک تھی۔پیداوار زیادہ ہونے کے نتیجے میں جولائی 2017 میں چینی کی قیمت کم ہو کر48 روپے کلو تک آگئی اب پھر50روپے کلو ہوگئی ہے جبکہ نومبر 2017 تک یہ قیمت 55 روپے کلو تک جانے کا امکان ہے۔شوگر ملز مالکان نے حکومت سے 15 لاکھ ٹن چینی برآمد کرنے کی اجازت مانگی صرف 5 لاکھ ٹن چینی برآمد کرنے کی اجازت دی گئی ہے تاکہ ملک کے اندر چینی کے کارخانہ دار ملی بھگت سے چینی کی غیر قانونی مہنگائی نہ کرسکیں۔