بجلی بحران کا حل شمسی توانائی کا فروغ ،سولر پینلز پرٹیکس کم کیے جائیں


ماہرین شعبہ توانائی نے بجلی کی بڑھتی ہوئی طلب پوری کرنے کیلئے توانائی کے متبادل ذرائع بروئے کار لانے کی ضرورت پر زور دیا ہے ، انرجی ایکسپرٹس کا کہنا ہے کہ عالمی سطح پر تبدیل ہوتے ہوئے رجحانات کے پیش نظر پاکستان کو بھی بجلی پیداوار کے جدید ذرائع استعمال کرنے چاہئیں، حکومت گھریلو سطح پر شمسی توانائی کے استعمال کے فروغ کیلئے سولر پینلز اور بیٹریوں پر امپورٹ ڈیوٹیزاور ٹیکسز میں کمی لائے ، پاکستان میں شمسی توانائی کے پوٹینشل کو مد نظر رکھتے ہوئے اگر 10لاکھ گھروں میں موثر سولر پاور نظام نصب کر دیا جائے توقومی گرڈکا 30فیصد تک بوجھ کم کیا جا سکتا ہے ، علاوہ ازیں گھریلو سطح پر پیدا ہونیوالی بجلی‘‘ نیٹ میٹرنگ’’ کے ذریعے نیشنل گرڈ میں شامل کر کے اسے صنعتوں اور کمرشل صارفین کیلئے قابل استعمال بنا کر معاشی نمو میں نمایاں اضافہ کیا جا سکتا ہے۔