ہیلتھ اسکینڈل میں یورپ میں لاکھوں مرغیاں تلف کی جائیں گی


ممنوع فپرونیل نامی زہریلی شے کی حامل ویٹرنری دوا سے پیدا ہونے والے ہیلتھ اسکینڈل کے باعث یورپ میں لاکھوں مرغیاں تلف کیے جانے کا امکان ہے۔

ڈچ فارمنگ آرگنائزیشن ایل ٹی او نے کہا ہے کہ نیدرلینڈ کی 150 کمپنیوں کی کئی ملین مرغیاں تلف کی جائیں گی، 3لاکھ تو ہلاک کربھی دی گئی ہیں۔ ترجمان ایل ٹی او نے بتایا کہ مرغیاں آلودگی کی وجہ سے تلف کرنا پڑیں گی۔ بلجیم کے وزیر زراعت ڈینس ڈوکارمے نے کہا ہے کہ فپرونیل آلودگی کا علم ہونے کے باوجود 20جولائی تک پڑوسی ملکوں کو بتانے میں ناکامی کی وجوہ جاننے کے لیے فوڈ سیفٹی ایجنسی کو منگل تک رپورٹ دینے کی ہدایت کردی گئی ہے۔

ایجنسی کو معاملے سے آگہی کے بعد سے کیے گئے اقدامات بتانے کا حکم دیا گیا ہے تاہم جرمنی اورنیدرلینڈ کے دباؤ کے شکار ڈوکارمے نے مکمل شفافیت کا وعدہ کیا اور کہاکہ وہ جلد پڑوسی ملکوں کے وزرائے زراعت سے ٹیلی فون پر بات کریں گے۔

Advertisement

واضح رہے کہ فپرونیل جوؤں اور کیڑوں سے نجات کے لیے جانوروں کی ادویہ میں استعمال کی جاتی ہے مگر اس دوا کا استعمال مرغیوں اور انسانی خوراک کے حامل دیگر جانوروں میں ممنوع ہے کیونکہ یہ انسانوں کے گردوں، جگر اور تھائیروئیڈگلینڈز کے لیے انتہائی خطرناک ہے، ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (ڈبلیوٹی او) نے اسے خطرناک قرار دیا ہوا ہے۔