غیر مناسب ایکسپورٹ پالیسی،گندم کے نرخ 100روپے گر گئے


پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن (پنجاب) نے کہا ہے کہ حکومت کی عدم دلچسپی اور غیر مناسب ایکسپورٹ پالیسی کے باعث مارکیٹ میں گندم کی فی من قیمت میں 100 روپے کی کمی ہوگئی ،فاضل گندم کی نکاسی میں حکومتی عدم توجہی کی وجہ سے مارکیٹ میں شدید مندی کا رجحان پیدا ہو گیا ہے جبکہ زمینداروں کیلئے مونجی اور کاٹن کی فصلوں پرآنے والے اخراجات پورے کرنا بھی دشوار ہو گئے ہیں، گزشتہ روز ایسوسی ایشن کے دفتر میں پفماپنجاب کے چیئرمین ریاض اﷲ خان ، گروپ لیڈر عاصم رضا ، میاں ریاض ، لیاقت علی خان ، سابق چیئرمین چوہدری افتخار احمد مٹواور میاں شہزاد شفیع و دیگر رہنماؤں نے کہا کہ حکومت کی گندم خریداری ہدف کے بعد بچ جانے والے لاکھوں ٹن گندم کا کوئی خریدار نہیں جبکہ کسان مجبوراً اپنی گندم اونے پونے داموںمیں فروخت کرنے پر مجبور ہیں ،دوسری جانب تمام تر حکومتی قواعد و ضوابط پورے کرنے کے بعد گندم وآٹا کے ایکسپورٹ کرنے والے برآمد کنندگان کے اربوں روپے کے ریفنڈزکئی ماہ سے پنجاب حکومت نے دبا رکھے ہیں جس کی وجہ سے فلور ملنگ انڈسٹری بھی شدید بحران سے دوچار ہو گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر حالات جوں کے توں ہی رہے تو آٹے کے شدید بحران کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے ۔