فلورملزاورایکسپورٹرز شدید مالی دباؤ کا شکار,ریفینڈزکی ادائیگیوں کا مطالبہ


پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن نے گندم کے ایکسپورٹرز کے اربوں روپے کے پھنسے ہوئے ریفنڈز اداکرنے کا مطالبہ کیا ہے ، ایسوسی ایشن کے مطابق گندم اور آٹا ایکسپورٹ کرنے والی فلور ملز اور ایکسپورٹرز ریفنڈز کی ادائیگیاں نہ ہونے کی وجہ سے شدید مالی دباؤ کا شکار ہوگئے ہیں جبکہ متعدد فلور ملز کا کاروبار ٹھپ ہو کر رہ گیا ہے ۔ گزشتہ روز گفتگو کرتے ہوئے پفما کے عہدیداروں چیئرمین ریاض اﷲ خان ، گروپ لیڈر عاصم رضا ، میاں ریاض ، لیاقت علی اور سابق چیئرمین افتخار احمد مٹونے کہا ہے کہ پنجاب حکومت دیگر صوبوں کے فلور ملز مالکان اور ایکسپورٹر ز کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک کر رہی ہے ۔ہم نے حکومت کے طے کردہ قواعد و ضوابط کی پاسداری کرتے ہوئے پڑوسی ملک افغانستان کوگندم اور آٹا ایکسپورٹ کیا جو پچھلی کئی دہائیوں سے ہماری مارکیٹ ہے مگر ایکسپورٹ کا عمل مکمل ہونے کے کئی ماہ گزرنے کے باوجود حکومت کی جانب سے طے کردہ ریفنڈز کے کلیمز کی ادائیگیاں نہ کی گئیں جس کی وجہ سے ہمارے کاروبار کو شدید نقصان پہنچا ہے ،اس کے باوجود وزیر اعلیٰ پنجاب کے رمضان پیکیج کو کامیاب کرنے کیلئے بلا تعطل تمام رمضان بازاروں میں معیاری اور مکمل وزن کے ساتھ سستا آٹا فراہم کر رہے ہیں۔انہوں نے وزیر اعظم نواز شریف اور وزیر اعلیٰ شہباز شریف سے اپیل کی ہے کہ فوری طور پرگندم کے ایکسپورٹرز کے رکے ہوئے ریفنڈز کی ادائیگیاں کروائیں تاکہ تیز ی کے ساتھ گرتی ہوئی فلور ملنگ انڈسٹری کو سہارا دیا جا سکے ۔