کھاد پر سبسڈی کاخاتمہ زراعت پر ڈرون کے مترادف ہے،کسان بورڈ


زرعی پیداوار میں کمی ، فصلوں کی کاشت ناممکن ہو جائے گی ، صدرچوہدری نثار احمد
کسان رہنماؤں نے کھاد پر سبسڈی ختم کرنے کے اعلان کو زرعی معیشت پر ڈرون حملے سے تعبیر کیا ہے ، کاشتکار تنظیموں کا کہنا ہے کہ تیل اور بجلی کی قیمتیں پہلے ہی کسانوں کی دسترس سے باہر ہیں اب کھاد کی قیمتوں پر سبسڈی ختم کرنے سے کھادوں کی قیمتوں میں پانچ سو سے ہزار روپے فی بوری اضافہ ہو جائے گا جس سے زرعی مداخل میں مزید اضافہ سے زراعت کا بھٹہ بیٹھ جائے گا۔ گزشتہ روز خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کسان بورڈ پاکستان کے صدر چوہدری نثار احمداور سیکریٹری جنرل ارسلان خان خاکوا نی نے کہا کہ ٹیوب ویل اور زرعی مشینری پہلے ہی مہنگے ہو چکے ہیں ۔کھادوں کے استعمال میں بے انتہا کمی سے زرعی پیداوار میں بھی کمی ہوجائے گی۔ کسانوں کیلئے فصلوں کی کاشت ناممکن ہوجائے گی، زرعی مداخل کی قیمتیں بڑھنے سے فصلوں کی لاگت کاشت مزید بڑھ جائے گی ،حکومت فوری طور پر حالیہ اضافے کو واپس لے ۔